April 15, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/redpanal.com/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253

مصنوعی ذہانت کے آلات تیار کرنے والی کمپنی کی مالیت ایک کھرب ڈالر سے زیادہ ہوگئی ہے

مصنوعی ذہانت کے آلات تیار کرنے والی امریکی کمپنی ’نویڈیا‘ جس تیزی کے ساتھ ترقی کی منازل طے کرتے ہوئے آگے بڑھی ہے کوئی دوسری کمپنی اس کا مقابلہ نہیں کرسکتی۔

امریکی کمپنی “نویڈیا” راکٹ کی تیزی کے ساتھ ابھری ہے اور اس کا نام گذشتہ سال کے دوران وسیع پیمانے پر گردش کر رہا ہے۔ مئی 2023 میں “نویڈیا” کمپنی جو مصنوعی ذہانت کے پیچیدہ کمپیوٹنگ کاموں کے لئے چپس بناتی ہے ان چند کمپنیوں میں سے ایک بن گئی جن کی مالیت ایک کھرب ڈالر سے زیادہ ہے۔

مالیاتی منڈیوں میں “نویڈیا” آہستہ آہستہ حالیہ برسوں میں آگے بڑھی۔ یہاں تک کہ یہ مارکیٹ ویلیو کے لحاظ سے بدھ کے روز یہ مارکیٹ کی سب سے بڑی امریکی کمپنی بن گئی۔ امریکی ریاست کیلیفورنیا کے سانٹا کلارا میں ہیڈ کواٹر رکھنے والی کمپنی کے حصص میں 2.46 فی صد منافع حاصل ہوا جس کے بعد کمپنی 1.825 ٹریلین ڈالر کی مالک بن گئی۔

نویڈیا نے مارکیٹ ویلیو کے لحاظ سے سب سے بڑی امریکی کمپنیوں کی فہرست میں تیسری پوزیشن پر قبضہ جماتے ہوئے گوگل کی ملکیتی الفابیٹ کمپنی کو بھی پیچھے چھوڑ دیا۔

یہ کمپنی3 دہائیوں سے بھی زیادہ عرصہ قبل قائم کی گئی تھی۔ مگر حالیہ عرصے میں “نویڈیا” راکٹ کی سی تیزی کے ساتھ اوپر گئی۔

حال ہی میں ٹیکنالوجی کمپنیوں نے مصنوعی ذہانت کے میدان میں اپنی سرمایہ کاری کو تیز کردیا ہے۔ خاص طور پر نومبر 2022 میں “چیٹ جی بی ٹی” کے پروگرام اوپن اے آئی کی لانچ کے بعد مصنوعی ذہانت کے میدان میں سرمایہ کاری بڑھنے لگی ہے۔

نویڈیا کے جدید چپس مصنوعی ذہانت کی ایپلی کیشنز کو پیچیدہ الگورتھم کے ذریعے ڈیٹا پربہت تیزی سے عمل کرنے میں مدد کرتے ہیں۔ ان میں انٹرنیٹ سے کھرب کے الفاظ کے ساتھ تصاویر، ویڈیوز اور دیگرمواد کی تیاری میں مدد دیتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *